Sitting on 21st July 2020

Print

List of Business

 

صوبائی اسمبلی پنجاب

 

 

 

منگل 21 جولائی 2020کو 2:00بجے دن منعقد ہونے والے اسمبلی کے اجلاس کی فہرست کارروائی

 

 

 

تلاوت  اور نعت

 

......

 

 

 

سوالات

 

 

 

محکمہ خوراک سے متعلق سوالات

 

دریافت کئے جائیں گے اور ان کے جوابات دیئے جائیں گے۔

 

 

 

غیرسرکاری ارکان کی کارروائی

 

 

 

(مفاد عامہ سے متعلق قراردادیں)

 

 

 

(مورخہ 9 جون 2020 کے ایجنڈے سے زیر التواء قرارداد)

 

 

 

.1

جناب محمد ایوب خان :

اس ایوان کی رائے ہے کہ دیگر صوبوں  کی طرز پر صوبہ پنجاب کے تمام سرکاری ملازمین کو اپنی
مدت ملازمت مکمل ہونے کے بعد گروپ انشورنس کی رقم مع منافع ادا کرنے کے لئے فی الفور قانون سازی کی جائے اور قواعد و ضوابط مرتب کئے جائیں۔

 

.........

 

(موجودہ قراردادیں)

 

.1

جناب احسان الحق :

جناب محمد عبداللہ وڑائچ :

محترمہ خدیجہ عمر :

جناب محمد افضل :

یہ ایوان شیخوپورہ میں ٹرین اور کوسٹر کے حادثے میں سکھ یاتریوں کے جاں بحق ہونے پر انتہائی دُکھ اور رنج و غم کا اظہار کرتا ہے۔ یہ ایوان اور پاکستان کے عوام اس دُکھ کی گھڑی میں اپنے سکھ بہن بھائیوں کے غم میں برابر کے شریک ہیں۔ یہ ایوان اس یقین کا اظہار کرتا ہے کہ پنجاب حکومت زخمی اور جاں بحق ہونے والے سکھ یاتریوں کے لواحقین کی ہر ممکن امداد کرے گی۔

 

.........

 

.2

محترمہ سمیرا کومل :

پنجاب میں حکومت نے گندم کا سرکاری ریٹ 1400 روپے فی من مقرر کیا ہے جبکہ صوبہ بھر میں گندم 1800 سے 2000 تک فی من فروخت ہو رہی ہے۔ لہذا یہ ایوان حکومت سے مطالبہ کرتا ہے کہ صوبہ بھر میں گندم اور آٹا کی سرکاری ریٹس پر فروخت کو یقینی بنایا جائے۔

 

.........

 

 

 

 

 

.3

محترمہ سعدیہ سہیل رانا:

اس ایوان کی رائے ہے کہ بچوں کی ذہنی نشونما، مثبت سوچ کی عادت اپنانے اور مستقبل میں پیش آنے والے مختلف مسائل کو بہتر طریقے سے حل کرنے کے لئے تعلیمی اداروں میں سائیکالوجیکل سنٹرز اور کلاسز کا قیام عمل میں لایا جائے تاکہ بچوں کی تعلیم کے ساتھ ساتھ انکی مثبت ذہنی تربیت بھی کی جا سکے۔

 

.........

 

.4

چودھری افتخار حسین چھچھر:

بصیرپور ریلوے سٹیشن کے ساتھ مین بازار کا پھاٹک بہت چھوٹا ہے جس کی وجہ سے گھنٹوں ٹریفک جام رہتا ہے، کئی مریض پھاٹک پر ٹریفک جام ہونے کی وجہ سے جاں بحق ہو چکے ہیں۔ لہذا صوبائی اسمبلی پنجاب کا یہ ایوان وفاقی حکومت سے سفارش کرتا ہے کہ اس ریلوے پھاٹک کی توسیع کیلئے فی الفور اقدامات کئے جائیں تاکہ عوام کو ٹریفک جام کی اذیت سے نجات مل سکے۔

 

.........

 

.5

محترمہ شعوانہ بشیر :

اس ایوان کی رائے ہے کہ رنگ روڈ پر آنے جانے والے افراد کو 90 روپے روزانہ دینے پڑتے ہیں جو روزانہ کی بنیاد پر روزگار کے لئے آنے جانے والوں اور طالب علموں کے لئے بہت زیادہ رقم ہے۔ لہذا یہ ایوان مطالبہ کرتا ہے کہ اس مقصد کے لئے 200 روپے کا ماہانہ کارڈ جاری
کیا جائے۔

 

.........

 

 

 

لاہور

محمد خان بھٹی

مورخہ: 16 جولائی 2020

سیکرٹری

 

Summary of Proceedings

Not Available

Resolutions Passed

Not Available